Home / News / Couple arrested for kidnapping, raping and filming female student

Couple arrested for kidnapping, raping and filming female student

Couple arrested for kidnapping, raping and filming female student

کم عمر لڑکیوں کو اغواہ کے بعد ریپ کا دل دہلا دینے والا واقعہ منظر عام پر آگیا۔۔۔127 لڑکیوں کو ریپ کے بعد ویڈیوز بناکر پورن سائٹ کو فروخت کرنے والا جوڑا پکڑا گیا۔۔

تعلیمی اداروں و گلی محلوں سے نوجوان طالبات و کم عمر لڑکیوں کو بہلا پھسلا کے اغواء بعد ریپ اور اور اس شیطانی کھیل کی ویڈیوز بین الاقوامی Porno Site کو بھاری معاوضے عوض فروخت کرنے والا جوڑا بلاآخر پولیس کے ہتھے چڑھ گیا

*خاوند گلستان کالونی میں واقع کوٹھی میں لڑکیوں ساتھ زبردستی جنسی فعل کرتا جبکہ بیوی موبائل فون میں اس مکروہ عملی کی ویڈیوز بناتی تھی*

Couple arrested for kidnapping, raping and filming female student

*متاثرین میں آٹھ سے بارہ سال کی عمر تک کی معصوم لڑکیاں کی شامل*

*سات ماہ کے دوران ملزم نے 127 سے زائد لڑکیوں ساتھ ریپ کیا اور اسکی بیوی نے ویڈیوز بنا کر بیرون ملک فروخت کیں*

*تفتیش کاروں نے ملزمان کے موبائل فونز سے تمام ویڈیوز برآمد*

تفصیلات کے مطابق تھانہ سٹی کے اہلکاروں نے ایک کاروائی کے دوران گجر خان نے تعلق رکھنے والے ایک جوڑے کو “بھائی بہن”
بنکر گورنمنٹ گورڈن کالج باہر سے شادی شدہ نوجوان طالبہ کو بہلا پھسلا کر اغواہ کرنے کے بعد ریپ اور اس مکرو فعل کی موبائل فونز میں ویڈیو بنا کر ایک بین الاقوامی پورن سائٹ کے ہاتھوں بھاری معاوضے عوض فروخت کرنے کے جرم میں گرفتار کر لیا۔

جوڑے کی شناخت قاسم جہانگیر ولد سعید جہانگیر
بنکر سکالجز، یونیورسٹیوں اور گلی و محلہ سے نوجوان طالبات و کم عمر لڑکیوں کو اغواہ کے بعد ریپ کر کے اس شیطانی کھیل کی موبائل فونز میں ویڈیو ز بنا کر بین الاقوامی پورنو ویب سائیٹ کے ہاتھوں بھاری معاوضے عوض فروخت کرنے کے جرم میں گرفتار کر لیا۔

پولیس نے اغواہ اور زناء نے دفعات تحت ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کر لیا جبکہ ملزمان کی شناخت قاسم جہانگیر ولدجہانگیر سعید اور کرن زوجہ قاسم سعید سکنہ متوا ، ڈھوک حبیب کینال ، مندرہ تحصیل گجر خان سے ہوئی ہے۔
زرائع کے مطابق تھانہ سٹی کو سنبل جمیل زوجہ یاسر مصطفی سکنہ وقار النساء کالج، جہانگیر روڈ نے درخواست دی کہ میں علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی میں MSc Economics (Semester II) کی طالبہ ہوں مورخہ 3 اگست میں گورنمنٹ گورڈن کالج میں ورکشاپ میں شرکت بعد شام چھ بجے گھر جانے لیے میں گیٹ پر آئی تو نقاب پہنے ایک لڑکی میرے قریب آئی اور خود کو سٹوڈنٹ ظاہر کرتے ہوئے مجھ سے بات چیت کرنے لگی اور پوچھا کہاں جانا ہے جس پر میں نے اسے بتایا ٹیپو روڈ تو وہ بولی میں نے بھی ادھر ہی جانا ہے اور میرا بھائی اپنی گاڑی میں آرہا ہے تم بھی میرے ساتھ بیٹھ جانا۔ مدعیہ کے مطابق اتنی دیر میں ان کے پاس گرے رنگ کی گاڑی VW-789 رکی اور ایک مرد باہر آیا۔ مدعیہ کے مطابق وہ گاڑی پاس کھڑی تھی کہ لڑکی نے اسے دبوچ کیا اور گاڑی کی پچھلی سیٹ پر دھکیل دیا اور خود بھی ساتھ بیٹھ گئی جبکہ مرد نے فٹا فٹ گاڑی سٹارٹ کی۔ مدعیہ کے مطابق لڑکی نے گاڑی کے شیشوں پر کالے رنگ کے پردے گرائے اور خنجر نکال کر اسے دھمکی دی کہ شور مت مچانا ورنہ جان سے مار دوں گی۔ مدعیہ کے مطابق سے گلستان کالونی لین نمبر 3 غفار سٹریٹ میلاد چوک میں واقع ایک گھر میں لے جایا گیا جہاں مرد نے اس ساتھ زبردستی جنسی زیادتی کی جبکہ لڑکی نے موبائل فون میں اس کی ویڈیو اور تصویر بنائیں اور اسے دھمکی دی کی اپنا منہ بند رکھنا ورنہ تمھارے پورے خاندان کو ختم کر دیں گے۔ مدعیہ مطابق اسے مرد رات نو بجے اپنی گاڑی میں ٹیپو روڈ چھوڑ کر فرار ہو گیا۔ پولیس نے ملزمان خلاف زیر دفعات 376/365 ت پ مقدمہ درج کیا اور تفتیش شروع کر دی۔

ALSO READ  Nazish Jehangir Dislcose reveal truth About Marrying Mohsin Abbas Haider

مقدمہ کے تفتیشی افسر ٹرینی ایس آئی عقیل راٹھور نے مدعیہ کی نشاندھی پر مزکورہ مکان پر چھاپہ مار کر جوڑے کو گرفتار کر لیا اور تھانے منتقل کر دیا۔ زرائع کے مطابق ابتدائی طور پر تھانہ کے مہتمم نے اس کیس کو “جعلی ریپ کیس” کے طور پر لیا
اور جوڑے کو علاقہ مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کر کے قاسم جہانگیر کا چار روزہ جسمانی ریمانڈ حاصل کیا جبکہ اسکی بیوی کرن کو چودہ روزہ جیوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔
زرائع کے مطابق تھانہ سٹی میں تعینات فرنٹ ڈیسک انچارج نے ملزمان کے موبائل فونز کو جب ڈی کوڈ کر کے ڈیٹا چیک کیا تو اس کو خفیہ فائلز میں سٹور لاتعداد ریپ کی ویڈیوز اور قابل اعتراض تصاویر ملیں جو فوری طور پر مہتمم اور تفتیشی افسر راٹھور کے نوٹس میں لائی گئیں۔
سی پی او فیصل رانا نے اس پہ موقف دیتے ہوئے کہا کہ
وقوعہ کا مقدمہ تھانہ سٹی میں اغواء اور زیادتی کی دفعہ کے تحت درج تھا ملزم قاسم عدالت سے جسمانی ریمانڈ پر ہے جبکہ اس کی اہلیہ ملزمہ کرن محمود جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوائی جا چکی ہے
ملزم میاں بیوی اب تک 45 لڑکیوں کو اپنی ہوس کا نشانہ بنا چکے ہیں
ملزمان زیادتی کا نشانہ بنانے والی بچیوں کی برہنہ ویڈیوز بھی بناتے تھے،ملزمان سے 10 واقعات کی برہنہ ویڈیوز اورہزاروں برہنہ تصاویر بر آمد کر لی گئی ہیں
ایم ایس سی کی طالبہ شادی شدہ لڑکی سے زیادتی کے مقدمہ میں بیڈ شیٹ اور ٹشو پیپرز ڈی این اے ٹیسٹ کے لئے بجھوائے گئے ہیں،
ایس پی راول کوملزم کی ہوس کا نشانہ بننے والی تمام بچیوں کے والدین سے رابطہ کرنے کی ہدائت جاری کی گئی ہیں
ہر وقوعہ کی الگ الگ ایف آئی آر درج کر کے ملزمان کو الگ الگ چالان کیا جائے گا

ALSO READ  Beaconhouse National University Presents BESTIVAL 2019 EUDAIMONIA Job Fair

ان معاشرتی ناسوروں کو قانون کی مطابق عبرتناک سزا دلوائی جائے گی تاکہ کسی کو حوا کی بیٹی سے زیادتی اور بلیک میل کرنے کی سوچ بھی نہ آئے،،سی پی او کی ہدایت۔

 

Rawalpindi police have arrested a married couple on the suspicion of kidnapping, raping and filming a female student of the Allama Iqbal Open University, City Police Officer (CPO) Faisal Rana said on Friday.

Rana said that the City police station had filed a first information report (FIR) against the suspects on August 3 after the student approached the police with her complaint.

According to the victim, she was kidnapped from outside Gordon College — where she had gone to attend a workshop — by a woman who pretended to be a fellow student.

According to the FIR, the woman had said that her ‘brother’ was coming to pick her up and offered the victim a lift. After a few minutes, a man arrived in a grey car and the woman pushed the victim inside the vehicle and put a knife to her throat to silence her.

The complainant said that her kidnappers took her to a house in Rawalpindi’s Gulistan Colony where the man raped her while the woman took pictures and recorded videos. The alleged perpetrators threatened the victim of dire consequences if she decided to approach authorities. According to the FIR, the man dropped her at Tipu Road at night.

ALSO READ  Think differently become smarter lazy person will find easy way to do it

The Rawalpindi CPO told DawnNewsTV on Friday that the suspects were later found to be not siblings, but a married couple.

He stated that the two had also admitted to have kidnapped, raped and filmed about 45 other women. They had also admitted to have sold the videos and photos to an international porn website, Rana said. He added that the police had recovered multiple photos and videos of other victims as well.

The man had further revealed to police that he had kidnapped several girls of ages 8-12 with the help of his wife and subjected them to the same treatment. He admitted that they had sold the children’s videos to an international website.

Rana said that he had directed police officers to identify the victims in the videos and pictures, and lodge a separate case for each incident.

Speaking of developments in the registered case, Rana said that the police had recovered evidence from the crime scene and sent it for forensic examination. The woman has been sent to Adiala jail on judicial remand while the man is in police custody on physical remand.

Check Also

PM Imran Khan Powerful Speech Celebrities Are Proud

PM Imran Khan Powerful Speech Celebrities Are Proud

Prime Minister Imran Khan’s powerful 50-minute-long speech at the 74th session of the United Nations …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *